يھوديت اور اس کےعزايۡم



اگر غير يھودي دريا ميں ڈوب رھا ھو تو اسے نجات نہ دو اس لئے کہ وہ سات قوميں جو سر زمين کنعان ميں تھيں  اور يھودي ان کو مار ڈالنے پر مامور ھوئے تھے، سب کے سب قتل نھيں کئے جا سکے تھے ممکن ھے کہ يہ ڈوبنے والا شخص انھيں ميں سے ايک ھو ۔

جھاں تک تمھارے امکان ميں ھو غير يھوديوں کو قتل کرو اور اگر تم نے کسي غير يھودي کو قتل کرنے پر قدرت حاصل کرنے کے بعد اس کو قتل نہ کيا تو گناہ انجام ديا ھے ۔

عيسائي کو ھلاک کرنا ثواب ھے اور اگر کوئي اس کے قتل پر قادر نہ ھو تو کم از کم اسے اس کي ھلاکت کے اسباب ضرور فراھم کرنا چاھئيں ۔

جو لوگ مرتد ھوں (يعني جو يھودي آئين کي خلاف ورزي کريں ) اجنبي ھيںاور ان کو پھانسي دينا لازم ھے سوائے اس کے کہ دوسروں کو دھوکہ دينے کے لئے مرتد ھوئے ھوں ۔

10 ۔ غير يھوديوں کي ناموس پر تصرف اور ان کي آبرو ريزي ميں کوئي قباحت نھيں ھے اسلئے کہ کفار حيوانوں کے مانند ھيں اور حيوانات کے درميان کوئي شادي بياہ کا رواج نھيں ھوتا ھے ۔

يھوديوں کو حق ھے کہ غير مومن ( غير يھودي ) عورتوں کو بالجبر حاصل کرليں اور غير يھودي کے ساتھ زنا اور لواط کي کوئي سزا نھيں ھے ۔

يھودي کے لئے کوئي قباحت نھيں ھے کہ وہ اپنے مال اور شھوات کے سامنے سر تسليم خم کردے ( اسي ميں مبتلا ھو جائے)

11۔  قسم کھانا جائز ھے مخصوصاً غير يھودي کے ساتھ معاملے کي صورت ميں ۔

قسم کھانے کا اصول جھگڑوں کو ختم کرنے کے لئے شريعت نے بيان کيا ھے ليکن يہ اصول کفار(غير يھوديوں) کے لئے نھيںھيں کيونکہ وہ انسان نھيں ھيں ۔ جھوٹي گواھي بھي دينا جائز ھے ( باوجود يکہ جانتا ھو کہ حق يھودي کے ساتھ ھے مگر جھوٹي گواھي دے سکتاھے) چنانچہ لازم ھے کہ اگر بيس جھوٹي قسميں بھي کھاني پڑيں تو بھي اپنے يھودي بھائي کو خطرہ ميں نہ ڈالو ۔يھوديوں پر لازم ھے کہ ھر روز تين مرتبہ عيسائيوں پر لعنت کريں اور ان کي نابودي کے لئے خدا سے دعا کريں ۔

ھم پر لازم ھے کہ نصاري کے ساتھ حيوانات جيسا سلوک روا رکھيں ۔



back 1 2 3 4 5 6 7 8 9 10 11 12 13 14 next