يھوديت اور اس کےعزايۡم



(1)۔سفر تثنيہ ۔باب14۔آيت/21   (2)۔سفر نحميا۔باب13۔آيت/25   (3)۔سفرخروج۔باب 23۔آيت/31

(4)۔سفر تثنيہ ۔باب 1۔آيت/7و8  (5)۔مزامير ۔باب 2۔آيت/8و9       (6)۔سفرحزقيال ۔باب 39۔آيت/18

(7)۔سفر تثنيہ ۔باب20۔آيت/ 3   (8)اشعيا۔باب 14۔آيت/1تا3

تلمود (1)

يھودي ”خاخاموں “نے برسوں توريت پر مختلف خودساختہ شرحيں اورتفسير يںلکھيں ھيں۔ان تمام شرحوں اورتفسيروں کوخاخام ”يوخاس “نے 1500ءء ميںجمع بندي کرکے اسميںکچہ دوسري کتابوںکاجو 230ئئاور  500ئئميںلکھي گئي تھيں، اضافہ کرديا ۔اس مجموعہ کو” تلمود“  يعني تعليم ديانت وآداب يھود کے نام سے موسوم کياگيا۔

يہ کتاب يھوديوں کے نزديک بھت تقدس کي حامل ھے اورتوريت وعھد عتيق کے مساوي حيثيت رکھتي ھے  (بلکہ توريت سے بھي زيادہ اھميت کي حامل ھے جيسا کہ گرافٹ نے کھاھے :جان لوکہ خاخام کے اقوال پيغمبروں سے زيادہ بيش قيمت ھيں )۔

يھوديوں کي خود پرستي اور انسانيت مخالف يھودي عقائد سے آشنائي کے لئے اس کتاب کے چند جملے نقل کئے جارھے ھيں:(35)

1)۔دن 12 گھنٹوں پر مشتمل ھے ۔

شروع کے 3 گھنٹوں ميںخداشريعت کا مطالعہ کرتاھے۔

اسکے بعد 3گھنٹے احکام صادرکرنے ميں صرف کرديتاھے۔پھرتين گھنٹے دنيا کو روزي ديتاھے۔

اورآخري 3گھنٹے سمندري حوت جومچھليوں کي بادشاہ ھے، کے ساتھ کھيل کود ميںمصروف رھتاھے۔



back 1 2 3 4 5 6 7 8 9 10 11 12 13 14 next