مذہب زرتشت اورحجاب



 

{ آشوزرتشتپنی نصیحتوں اورمشوروں کے ذریعے حجاب کی اھمیت کو اجاگر کرتے ھوۓ کہتے ہیں :

ایرانی خواتین  حجاب کو ظاھری طور پر ایک  قومی  ثقافت  کی حیثیت سے اپناۓ ھوۓ ہیں ، جو ان کی  روح  کے  اندر  تک  قدم جماۓھوۓ ہے ۔ اس ذریعے سے حجاب کے قوانین کوآئیندہ نسلوںتک محفوظ  کیا جا  سکتا ہے، اور جو معاشرے  کو  بے  راہے جانے اور اخلاقی برائیوں سے بچا سکتا ہے ۔

اب آشو زرتشت کے کلام کو بہتر طور پرسمجھنے کے لیۓ مزید نقل کرتے ہیں ؛ تاکہ جو زحمتیں انھوں نے حجاب کی حفاظت  کے لیۓ اٹھائیں  بیان کی جا سکیں ، کیونکہ ظاھری حجاب باطنی عفت کا آئینہ دار ہے ،واضح ھو سکے ۔وہ کہتے ہیں :

اے نئی زندگی  کا آغاز کرنے والو! ( دلھا اور دلہن ) میری باتیں غور سے سنو ، اوران پر عمل کرو،غیرت اور پا کیزگی سے زندگی  گذارو، تم سے ہر ایک، محبت ، صداقت اور نیک کردارمیں دوسرے سے آگے بڑھنے کی کوشش کرے،تاکہ یہ مقدس ازدواجی زندگی ہنسی خوشی بسرھوسکے

اے خواتین وحضرات! سیدہے رستےکو تلاش کرو، اور اسی کواپناو، کبھی جھوٹ اور وقتی خوشی کی خاطراپنی زندگیوں کو برباد مت کرو، کیونکہ جو لذت گناہ اور بد نامی کے ھمراہ ھو، وہ دراصل میٹہے میں ملا ھوا جان لیوا زھر ہے جو خود دوزخ ہے،لہذا ایسے کاموں کے ذریعے اپنی زندگیوں کو تباہ مت کر بیٹھنا ۔ 

نیک رستے پرچلنے والوں کا اجراسے ملتا ہےجوخواھشات نفسانی ، خود پسندی اور باطل آرزوں کوخود سے اورکرےاور اپنی نفس پرغلبہ پالے وگرنہ غفلت اورلا پرواھی کا انجام افسوس اور ہاتھوں کو ملنے کے سوا توہے ہی نہیں۔     

دھوکہ کھانے والے افراد ، جو برائی میں دھنس جاتےہیں ، بد بختی اور نابودی کا شکار ھونے کےعلاوہ ان کا سرانجام آہ و زاری اورچیخ  و پکار ہے، لیکن جوافراد  میری  باتوں کوغور سے سنتے،اور ان پرعمل کرتےہیں ، ھمیشہ خوش وخرم زندگی بسر کرتےہیں، رنج وغم ان سےدورھوجاتےہیں اورھمیشہ کے لیۓنیکی ان کی قسمت میں لکھدی جاتی ہے۔ 3

اور" windy dad " کی کتاب میں بارھا یہ جملہ تکرارھوا  ہے :

" کلام ایزدی ہے کہ وہ  برائی کو نابود کر دے گا ،اے مرد ! تم سےمیری یہ خواھش ہے کہ راہ حلال کے ذریعے اپنی نسل بڑھاو اور پاک و پاکیزہ رھو، اے عورت ! میری تم سے  یہ خواھش ہے کہ اپنے تن کی حفاظت کرواور پاک و پاکیزہ رھو،میری تمناہےکہ صاحب اولاد ھوجاو اور کامیاب زندگی گذارو"۔ 4 



1 next