امام زمانه علیہ السلام کی ذاتی سیرت



 

امام  زمانه علیہ السلام کی ذاتی سیرت

 

امام مھدی علیہ السلام کی ذاتی رفتار میں آپ کی سیرت اور لوگوں سے آپ کا رابطہ ، اسلامی حکمرانوں کے لئے نمونہ ھے کیونکہ آپ کی نگاہ میں حکومت لوگوں کی خدمت اور انسانیت کو کمال کی بلندیوں پر پہنچانے کا ذریعہ ھے، نہ کہ مال و دولت جمع کرنے اور لوگوں پر ظلم و ستم کرنے اور خدا کے بندوں سے ناجائز فائدہ اٹھانے کا وسیلہ!!

واقعاً وہ صالحین کا امام جب مسند حکومت پر ھوگا تو پیغمبر اکرم(ص) اور امیر المومنین علیہ السلام کی حکومت کی یاد تازہ ھوجائے گی، حالانکہ آپ کے پاس بھت سا مال و دولت ھوگا، لیکن ان کی اپنی ذاتی زندگی معمولی ھوگی، اور کم ھی چیزوں پر قناعت کریں گے۔

امام علی علیہ السلام آپ کی توصیف میں فرماتے ھیں:

”امام (مھدی علیہ السلام) یہ عھد و پیمان کریں گے کہ (اگرچہ انسانی معاشرہ کے رھبر اور حاکم ھوں گے لیکن) اپنی رعایا کی طرح راستہ چلیں اور ان کی طرح لباس پہنیں اور ان کی سواری کی طرح سوار ی کریں ۔۔۔ اور کم چیزوں پر ھی قناعت کریں “۔([1])

حضرت علی علیہ السلام خود بھی اسی طرح تھے ، ان کی زندگی ، خوراک اور لباس میں انبیاء کی طرح زھد تھا ، اور حضرت امام مھدی علیہ السلام اس سلسلہ میں (بھی) آپ کی اقتدا کریں گے۔

حضرت امام صادق علیہ السلام نے فرمایا:

”اِنَّ قَائِمَنَا اِذَا قَامَ لَبِسَ لِبَاسَ عَلِیّ وَ سَارَ بِسِیْرَتِہِ“۔([2])

”جب ھمارا قائم ظھور کریں گے تو حضرت علی علیہ السلام کی طرح لباس پہنیں گے اور آپ ھی کے طریقہ کار کو اپنائیں گے“۔

وہ خود اپنے بارے میں سخت رویہ کا انتخاب کریں گے، لیکن امت کے ساتھ ایک مھربان باپ کی طرح پیش آئیں گے اور ان کے سکون اور آرام کے بارے میں سوچیں گے، یھاں تک کہ حضرت امام رضا علیہ السلام آپ کی توصیف میں فرماتے ھیں:



1 2 3 next