امام زين العابدين عليه السلام کی حديث يں



۱ ۔ پاک ومنزہ ہے وہ ذات جس نے اپنی نعمت کے اقرارکوحمداورشکرسے عاجزی کے اقرارکوشکرقراردیا۔بحارج ۷۸ ص ۱۴۲ ۔

۲ ۔ غوروفکرکرواورجس کے لئے پیداکئے گئے ہواس کے لئے عمل کروکیونکہ خدانے تم کوبیکاروعبث نہیں پیداکیاہے۔ (تحف العقول ص ۲۷۴) ۔

۳ ۔ خبردارگنہگاروں کی صحبت نہ اختیارکرو،اورنہ ظالموں کی مددکرو،اورنہ بدکاروں کاپڑوس اختیارکرو، ان کے فتنوں سے بچو، ان کی قربت سے دوررہو، یہ جان لوکہ جوخاصان خداکی مخالفت کرے گا، اوردین خداکے علاوہ کسی اوردین کی پیروی کرے گا،اوراپنے امورمیں اپنی رای کومستقل سمجھے گا اورولی خداکے امرکواہمیت نہ دے گاوہ ایسی بھڑکتی ہوئی آگ میں ڈالاجائیگاجوان بدنوں کوکھالیتی ہے جن پران کی بدبختی غالب ہوتی ہے،لہذااے صاحبان بصیرت عبرت حاصل کرواورخدانے تم کوجوہدایت بخشی ہے اس پراس کی حمدکرواوریہ سمجھ لوکہ خداکی قدرت سے نکل کرکسی غیرکی قدرت میں نہیں داخل ہوسکتے، اورخدا تمہارے اعمال کودیکھتاہے اورپھرتمہاراحشربھی اسی کی طرف ہونے والاہے لہذاموعظوں سے نفع حاصل کرو،اورصالحین کے آداب اختیارکرو۔ (تحف العقول ص ۲۵۴) ۔

۴ ۔ خداکی بارگاہ میں دوقطروں کے علاوہ کوئی اورقطرہ محبوب نہیں ہے

  ۱ ۔ وہ خون کاقطرہ جوراہ خدامیں گرے، ۲ ۔ وہ آنسوں کاخطرہ جورات کی تاریکی میں بندہ سے صرف خداکے لئے گرے۔(بحارج، ۱۰۰ ،ص ۱۰) ۔

۵ ۔ تین چیزیں مومن کونجات دینے والی ہیں ۱ ۔ لوگوں کے بارے میں زبان روکنا،غیبت نہ کرنا۔ ۲ ۔ ایسے کام کرناجواس کے لیے دنیاوآخرت میں مفیدہوں۔  ۳ ۔ اپنے گناہوں پربہت رونا۔ (تحف العقول ص ۲۸۲) ۔

۶         ۔ ۰۰ کسی سے دشمنی نہ کروچاہے تم کویہ گمان ہوکہ وہ تم کوضررنہیں پہونچائے گا، اورکسی کی دوستی ترک نہ کروچاہے تم کویہ گمان ہوکہ اس سے کوئی فائدہ نہ ہوگا۔(بحارج ۷۸ ،ص ۱۶۰) ۔

۷ ۔ معرفت اوردین مسلم کاکمال یہ ہے کہ لا،یعنی باتوں کوترک کردے،بہت کم لڑائی کرے، حلم صبر،اورحسن خلق کامالک ہو۔ (تحف العقول ص ۲۷۹) ۔

۸ ۔ لوگوں سے بہت کم ضرورتوں کوطلب کرنا،نقدا(یہی) مالداری ہے۔(تحف العقول ص ۲۷۹) ۔

۹ ۔صالح وشائستہ افرادکے ساتھ نشست وبرخواست شایستگی کی دعوت دیتی ہے۔ (تحف العقول ص ۲۸۳) ۔



1 next